Ads Top

سہیلی کی شادی

Views: 40 Share it Share it

ہک ہاااااا ۔۔۔

بعض اوقات دل سے وہ ہوک اٹھتی ہے کہ اہل نظر اگر دیکھیں تو قسم مردانگی کی ، چیخ مار کر بے ہوش ہو جائیں ۔۔۔۔

ایک یہ بچونگڑا ہے جس کو اللہ نے ایسی نیک دل، رحم دل بیوی سے نوازا ہے کہ مجھے مل جائے تو میں خاکم بدہم چوم چوم کر ہی مار دوں ۔۔۔

لوگ بل گیٹس، اوبامہ اور پتا نہیں کس کس ناہنجاز سے ملنا چاہتے ہوں گے، لیکن میرے جیسے لڑکے جو اس قسمت کے دھنی سے ملنا چاہتے ہوں گے، وہ ہاتھ کھڑے کریں ؟؟؟

ارے ارے بیٹھ جائیں۔۔ اوہ خدایا۔۔۔ ہاتھ کھڑے کرنے کا بولا تھا ظالمو تم لوگ تو ۔۔ میرا مطلب ہے خود ہی کھڑے ہو گئے ہو سارےے۔۔۔

او بھائی ببلو، بیٹھ جاؤ،
یار مولوی تو تو بیٹھ پلیز۔۔۔
ہاں ہاں سب ملنے جائیں گے اس سے۔

بھابھی جی۔۔۔ زندہ باد ۔۔۔ بھابھی جی زندہ باد ۔۔۔۔

نہیں نعرے بند کرو۔۔۔۔ یار بات تو کرنے دو پھر مل کر نعرے ماریں گے ۔۔۔

یار پلیز بیٹھ جاؤ۔۔۔۔۔ ظالمو مجھے دو لفظ لکھنے دو ۔۔۔

اچھا تو میں کہہ رہا تھا ۔۔۔۔

ہزاروں سال نرگس اپنی بے نوری پہ روتی ہے،
بڑی مشکل سے ہوتا ہے چمن میں دیدہ ور پیدا

ایسی خواتین آج کل کے فتنہ پرور اور ظلمات کے دبیز پردوں میں چھپے دور میں نا صرف مشعل راہ ہیں بلکہ سب مرد حضرات کو چاہیے کہ انکی بڑی سی تصویر فریم کروا کر گھر کے لاؤنج میں لگا دیں۔ شائد صبح شام دیکھ کر ظالم و جابر بیویوں کے دل میں اللہ پاک رحم ڈال ہی دے۔

ایسے تمام قبلِ مسیح کے بزرگ جو صرف حسرت و یاس کی تصویر بنے جوانوں کی ہمت کم کرنے کی سعی کر رہے ہیں، لیکن خود اپنی جوانی کے قصے ایسے سنا رہے ہیں جیسے ہرکولیس انکا شاگرد رہ چکا ہو، تو پریشان ہونے کی چنداں ضرورت نہیں۔ یہ تمام بابے ' نا کھیلوں گا نا کھیلنے دونگا ' پر عمل پیرا ہیں۔

رہی بات خواتین، اوہ میرا مطلب ہے شوخ و چنچل لڑکیوں کی تو جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ عورت ہی عورت کی دشمن ہوتی ہے، اور ظالم کو ظلم سے روکنا اسکے ساتھ بھلائی ہے، تو نوجوانانِ وطن ہمت نہیں ہارنی۔

بیک وقت دو بھابیاں لانے والے نے سوکھی زمین پر بارش کا پہلا قطرہ گرا کر ثابت کر دیا ہے کہ ظلم کے اندھیرے جتنے بھی گہرے ہوں، امید کی کرن نظر آ ہی جاتی ہے۔

ہم سب مردوں کی جانب سے پرزور مطالبہ کرتے ہیں کہ ان دونوں لڑکیوں کے مجسمے ہر شہر کے مین چوک میں لگائے جائیں، اور سال کا ایک دن انکی عظیم و لازوال محبت کے نام مختص کیا جائے۔

نوٹ: اس پوسٹ کو شئیر کرنے، چھپا کر بانٹنے ، وٹس ایپ گروپس میں شئیر کرنے یا زبانی سنانے کی اجازت عام ہے۔ لیکن احقر بیوی کے ہاتھ کے پڑے بیلن کا ذمہ اٹھانے سے قاصر ہے۔

عثمان گل

Via Usman Gul :


Home Ads