Ads Top

چائلڈ سیکس ایجوکیشن

Views: 37 Share it Share it

والدین اپنے بچوں کے ایک طرح کے باڈی گارڈ ہوتے ہیں۔ انہیں چاہیئے کہ وہ اپنے بچوں کے ساتھ اتنا قابل اعتماد رشتہ بنائیں کہ بچے انکے ساتھ ہر طرح کی بات کرسکیں۔ اگر کوئی بھی انسان نارمل روٹین سے ہٹ کر آپ کے بچوں کے ساتھ وقت گزارے یا انکو باہر لیجانے یا انکو کوئی کھانے پینے کی چیزیں دے تو بچے آپ کو اس کے بارے میں بتا سکیں۔ گھریلو کام کاج و تعلیمی عادات کے ساتھ ساتھ اپکو اپنے بچوں کو ضروری سیکس ایجوکیشن بھی دینی چاہیئے جس میں زرا سا بھی شرمانے یا جھجھکنے کی ضرورت نہیں۔ یہ آپ کے بچوں کی جسمانی و زہنی صحت اور زندگی کا سوال ہے۔
سب سے پہلے اپنے بچوں کو انکے جسم کے پرائیوٹ پارٹس جو کہ
( چھاتی )
(اگلی طرف سے ٹانگوں کے بیچ کی جگہ )
(پچھلی طرف سے ٹانگوں کے بیچ کی جگہ)
ان کو سمجھائیں کہ اس جگہ کو ماں باپ صرف و صرف نہلانے کے وقت چھو سکتے ہیں یا پھر ڈاکٹر اس وقت چھو سکتا / سکتی ہے جب ان کے ساتھ ان کے ماں باپ موجود ہوں۔ 
انکو سمجھائیں اگر کوئی بھی رشتہ دار، سکول ٹیچر، ٹیوشن پڑھانے والا، گھر میں کام کرنے والا، چوکیدار یا ڈرائیور انکے ان پرائیوٹ پارٹس والی جگہوں کو چھوتا ہے تو انکو فورا" وہاں سے بھاگ کر اپنے والدین یا گھر کے کسی بڑے کو بتانا چاہیئے اسکو سمجھانا چاہیئے کہ وہ انسان انکی کونسی جگہ کو کیسے چھو رہا تھا۔
۔
اس سے آگے بچوں کی زمہ داری ختم ہو جاتی ہے آگے کا کام والدین کا ہوتا ہے کہ وہ اس بندے سے بات کریں اور اسے ایسا کرنے سے روکیں اور اگر بچے مسلسل اس بندے کے بارے میں ایسی شکایت لگائیں تو والدین کو چاہیئے کہ وہ اس بندے کے ساتھ سختی سے پیش آئیں اور اس بندے کے ساتھ اپنا تعلق ختم کر لیں اور اس کی اپنے بچوں تک پہنچ ختم کر دیں اور اگر پھر بھی وہ انسان آپ کے بچوں کو پریشان کرنے سے باز نہیں آتا تو اسکے خلاف قانونی کاروائی کریں۔ 
۔
صرف یہی طریقہ ہے کہ ہم اپنی آنے والی نسل کو بچا سکتے ہیں وہ آپکا کوئی دوست، رشتہ دار یا کوئی بھی قریبی انسان ہو سکتا ہے اس سے تعلق ختم ہو جانے کے نقصانات کے بارے سوچنے سے پہلے اپنے بچے کی زندگی کا سوچیے کیونکہ بچوں سے زیادہ قیمتی والدین کے لیے کوئی رشتہ کوئی تعلق یا کوئی کاروبار نہیں ہوتا۔ ( ٹیگ کے لیے معزرت)
والسلام
زوہیب شاہ بخاری فیلنگ فکرمند فار بچہ پارٹی۔


Home Ads